رخسانہ فاونڈیشن کی جانب سے خانوزئی میں 2روزہ مفت طبی کیمپ:

0
154

کوہٹہ:

رخسانہ فاونڈیشن کی چیئرپرسن انیسہ خانم نے کہا ہے کہ مصیبت کی اس گھڑی میں رخسانہ فاونڈیشن بلوچستان کے سیلاب اور بارشوں سے متاثرہ افراد کو تنہا نہیں چھوڑے گی متاثرین کیلئے فاونڈیشن کی جانب سے خانوزئی میں 2روز ہ مفت طبی کیمپ لگایا گیا ہے جس میں سینکڑوں افراد کا معائنہ اورانہیں مفت ادویات فراہم کی گئیں۔یہ بات انہوں نے خانوزئی میں لگائے گئے میڈیکل کیمپ میں متاثرین اورصحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر رخسانہ فاؤنڈیشن کی ممبرارم شیخ چیف آپریٹنگ آفیسر رخسانہ فاؤنڈیشن سجاد منظور، چیف آپریٹنگ آفیسر لیو فار ہیومینٹی فاؤنڈیشن محمد اکمل خان بھی موجود تھے۔انہوں نے کہا کہ رخسانہ فاونڈیشن کی بانی مرحومہ رخسانہ مشتاق طاہرخیلی نے 2005ء میں فاونڈیشن کی بنیاد رکھی اور فلاحی کاموں کا آغاز کیا

جس کے بعد2008ء میں رخسانہ فاونڈیشن کے نام سے کلینک کا قیام عمل میں لایاگیا جس میں آج بھی مریضوں کو مفت سہولیات اور مفت ادویات فراہم کی جاتی ہیں جبکہ فاونڈیشن کے ماتحت سکول میں گلی محلوں میں اٹھانے والے 200سے زائد بچوں کو مفت تعلیم دی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ 2008 میں آنے والے زلزلے میں مظفرآباد اور اس کے نواحی گاؤں لواسی میں گھر تعمیر کرکے زلزلہ متاثرین میں تقسیم کئے گئے۔انہوں نے کہا کہ ملک کے مختلف علاقوں میں مختلف قدرتی آفات کے دوران متاثرین میں کروڑوں روپے مالیت کا سامان تقسیم کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا کے علاقے نوشہرہ میں متاثرین میں کپڑے اور ڈیرہ غازی خان کے کاشتکاروں میں 60لاکھ روپے مالیت کی کھاد اور مختلف فصلوں کے بیج دیئے گئے۔

 

انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں حالیہ سیلاب اور بارشوں سے متاثرہ علاقوں خانوزئی،کلی زرغون،کلی توردامن،کلی خوشاب،کلی نکاندہ،کلی ساگی اور کلی بلوزئی میں سینکڑوں خاندانوں میں رخسانہ فاؤنڈیشن لاہور نے علامہ اقبال میڈیکل کالج ایسوسی ایشن آف نارتھ امریکہ (اپنا)اوکلوہامہ چیپٹر اورلیوفارہیومینٹی فاونڈیشن کے خیمے،کمبل,بیٹ شیٹ اوراشیاء خوردونوش تقسیم کی گئیں جبکہ رخسانہ فاونڈیشن نے خانوزئی میں 2روزہ مفت طبی کیمپ لگایا جہاں مختلف امراض کے ماہرڈاکٹروں نے سینکڑوں مریضوں کا مفت معائنہ اورانہیں ادویات فراہم کیں۔انہوں نے کہا کہ رخسانہ فاونڈیشن بلوچستان کے سیلاب اور بارشوں سے متاثرہ افراد کو مصیبت کی اس گھڑ ی میں تنہا نہیں چھوڑے گی انکی ہرممکن امداد کو یقینی بنایا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ سیلاب سے ہونے والی تباہی بہت زیادہ ہے حکومت کے ساتھ ساتھ عالمی اداروں اوراین جی اوز کو بھی چاہئے کہ وہ آگے بڑھ کر زیادہ سے ذیادہ متاثرین کی امداد کو یقینی بنائیں۔

Webdesk

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here